حرم کی راہ میں سنتے ہیں اک بت خانہ آتا ہے

0
145
Romantic Poetry in Urdu
- Advertisement -

حرم کی راہ میں سنتے ہیں اک بت خانہ آتا ہے

اسی منزل پہ شاید دوست کا کاشانہ آتا ہے

بہ سوئے مے کدہ جب بھی کوئی مستانہ آتا ہے

صراحی جھومتی ہے وجد میں پیمانہ آتا ہے

یہ حالت ہو گئی اپنی جنوں میں ان دنوں ہمدم

- Advertisement -

وہیں منزل بناتا ہوں جہاں ویرانہ آتا ہے

نہ جانے حال کیا ہوگا مری مجبور توبہ کا

مچل جاتا ہے دل جب سامنے پیمانہ آتا ہے

مچایا شور زنجیروں نے یکسو ہو گئے اعدا

عجب انداز سے ظالم ترا دیوانہ آتا ہے

ہے دل بے چین کچھ بد ذوقیٔ احباب سے ورنہ

ظفرؔ مضمون لے کر بزم میں شاہانہ آتا ہے

مأخذ : اقدار

شاعر:ظفر مجیبی

مزید غزلیں پڑھنے کے لیے کلک کریں۔

- Advertisement -

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here