لب پہ تکریم تمنائے سبک پائی ہے

0
154
Romantic Poetry in Urdu
- Advertisement -

لب پہ تکریم تمنائے سبک پائی ہے

پس دیوار وہی سلسلہ پیمائی ہے

تختۂ لالہ کی ہر شمع فروزاں جانے

کس بھلاوے میں مجھے دیکھ کے لہرائی ہے

خاک در خاک چھپی ہے مری آنکھوں کی چمک

- Advertisement -

جس خرابے میں تری انجمن آرائی ہے

اپنے ہی پاؤں کی آواز سے ڈر جاتا ہوں

میں ہوں اور رہ گزر بیشۂ تنہائی ہے

پھر سر صبح کسی درد کے در وا کرنے

دھان کے کھیت سے اک موج ہوا آئی ہے

شاعر:ظفر اقبال

مزید غزلیں پڑھنے کے لیے کلک کریں۔

- Advertisement -

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here