ایک دیوار سی کہرے کی کھڑی ہے ہر سو

0
64
Romantic Poetry in Urdu
- Advertisement -

ایک دیوار سی کہرے کی کھڑی ہے ہر سو

پر سمیٹے ہوئے بیٹھی ہے چمن میں خوشبو

یہ اندھیرے بھی ہمارے لیے آئینہ ہیں

روبرو کرتے ہیں کردار کے کتنے پہلو

ان سلگتے ہوئے لمحوں سے یہ ملتا ہے سراغ

- Advertisement -

دم بہ دم ٹوٹ رہا ہے شب غم کا جادو

دام‌ بردار کوئی دشت وفا سے گزرا

صورت خواب ہوا حسن خرام آہو

پھر ہوا حبس کا احساس‌ گراں بار سہیلؔ

پھر مرا دل ہے طلب گار‌ ہوائے گیسو

مأخذ : Naghma-e-Shuoor

شاعر:ادیب سہیل

مزید غزلیں پڑھنے کے لیے کلک کریں۔

- Advertisement -

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here